پیل فیکٹری کے 250برطرف محنت کشوں کو فوری بحال کرو

0
237

رپورٹ (انقلابی سوشلسٹ)پیل کے250محنت کشوں کی برطرفی اوراُن پر جھوٹے مقدمات کے خلاف لاہورپریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ہوا جس میں سیاسی کارکنان ٹریڈ یونینسٹوں اور طلباء شریک ہوئے۔اِس موقع پر مظاہرین نے پیل کے محنت کشوں کی بر طرفی کے خلاف اور اُن کی بحالی کے لیے نعرہ بازی کرتے رہے نیز محنت کشوں پر جھوٹے دہشت گردی کے مقدمات کے خلاف اور مزدور اتحادکی بھی نعرہ بازی ہوئی۔
اِس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پیل ایکشن کمیٹی کے راہنما شفارش نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پیل کی انتظامیہ نے ہمیں نوکریوں سے نکال دیا اور ایسے محنت کش بھی ہیں جن کی رٹیائرمنٹ میں چند ماہ ہی رہ گے تھے پیل کی انتظامیہ ہمیں ڈرا دھمکا رہی ہے لیکن ہم اپنی جدوجہد جاری رکھیں گئیں جب تک سب محنت کش بحال نہیں جاتے ہیں۔اس موقع پر ٹریڈ یونین راہنما اکبر بلوچ نے کہا کہ یہ مزدور کی جدوجہد ہے اور ہم ہر سطح پر اس کی حمایت کریں گیں مزدوروں کی یہ جدوجہد دیگر مزدوروں کو بھی حوصلہ دئے گی۔کامریڈ مقصود ہمدانی نے کہا کہ سرمایہ دار طبقہ اکھٹا ہے اور وہ ہم پر حملہ آور ہے ہم مل کر ہی سرمایہ دار طبقہ کے حملوں کا مقابلہ کرسکتے ہیں۔فضل واحد نے اس موقع پر کہا کہ ریلوے کا مزدور پیل کے محنت کشوں کے ساتھ ہے ان کی یہ جدوجہد مزدور تحریک کے لیے ایک نیا حوصلہ ہے اگر پیل کے محنت کشوں کو بحال نہ کیا گیا تو ہمارا یہ احتجاج بڑھے گا۔جبکہ ریلوئے محنت کش یونین کے صدیق بیگ نے خطاب کرتے ہوئے کہ سرمایہ دار طبقہ مزدوروں پر حملہ آور ہے اور حکومت کی پالیساں سرمایہ داروں کے حق میں ہیں۔ہم لڑکرہی سرمایہ داروں کا مقابلہ کرسکتے ہیں لیکن اس کے لیے ہمیں اکھٹا ہونا ہوگا،آخر میں شہزاد ارشد نے کہا کہ پیل کے محنت کشوں کی جدوجہد اس بحرانی عہد میں ایک اہم جدوجہد ہے اور ان کی کامیابی مزدور تحریک کو نیا حوصلہ دئے گئی اس لیے ہم پیل کے محنت کشوں کی جدوجہد کی حمایت کرتے ہیں اور مطالبہ کرتے ہیں کہ ان کو بحال کیا جائے۔ہم اس جدوجہد کو دیگر محنت کشوں اور طلباء سے منسلک کریں گئیں ہماری لڑائی مشترکہ ہے ہم ایسا مل کرلڑسکتے ہیں اور انتظامیہ اور ریاست کو جھکنے پر مجبور کرسکتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here